اندازے

فلم شیریں اور فرہاد کی شوٹنگ ہو رہی تھی۔ سین کچھ یوں تھا کہ ہیرو نے خطرناک پہاڑ پر چڑھنا تھا۔ بہت سے لوگ کھڑے یہ خطرناک سین دیکھ رہے تھے۔ ان میں ایک اَن پڑھ جاہل بوڑھا بھی تھا ، جب ہیرو پہاڑ پر چڑھنے لگا تو بوڑھا آدمی بولا:
“او بچے! کیوں اپنی جان کا دشمن بن گیا ہے؟ ۔۔۔۔۔نیچے آجا!۔۔۔۔۔دیکھ پہاڑ بہت خطرناک ہے۔۔۔۔ میں کہتا ہوں واپس آجا!”

تھوڑی دیر بعد ہیرو پہاڑ کی چوٹی پر پہنچ گیا اور زور زور سے کہنے لگا۔ “شیریں شیریں۔۔۔۔۔”
بوڑھا آدمی بولا:
“میں آ کھیا سی ناں۔۔۔۔۔۔نا چڑھ اپر ہونڈ منگدا رؤ سیڑھی”!

**********

<<< پچھلا صفحہ اگلا صفحہ >>>

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔


اپنی قیمتی رائے سے آگاہ کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

Shoaib Saeed Shobi. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.