April 2014

اخبار میں تو نام مرا چھاپ دیجئے

اپنی گرہ سے کچھ نہ مجھے آپ دیجئے
اخبار میں تو نام مرا چھاپ دیجئے

بچپن میں سعودی عرب سے شائع ہونے والے اردو اخبار "اردو نیوز" میں ہم نے چند لطائف اور تصویر بھیجی تھی جو 1998ء میں تین قسطوں میں وقتاً فوقتاً شائع ہوئے۔ اس وقت ہماری خوشی کا کوئی ٹھکانہ نہ تھا۔ اس کے بعد نونہال، روحانی ڈائجسٹ اور جنگ وغیرہ میں بھی ہم "شائع" ہوئے مگر جو خوشی بچپن میں پہلی بار اپنا نام اخبار میں دیکھ کر ہوئی تھی وہ زندگی کی خوشگوار یادوں میں سے ایک ہے۔

تصویر کو بڑا کر کے دیکھنے کے لیے تصویر پر رائٹ کلک کریں اور نئے ٹیب میں کھولیں۔

تصویر کو بڑا کر کے دیکھنے کے لیے تصویر پر رائٹ کلک کریں اور نئے ٹیب میں کھولیں۔
تصویر کو بڑا کر کے دیکھنے کے لیے تصویر پر رائٹ کلک کریں اور نئے ٹیب میں کھولیں۔
٭----٭

آہ! ساری عمر ضائع کر دی!

محمد عامر ہاشم خاکوانی نے فیس بک پر مولانا مفتی محمد شفیع رحمتہ اللہ علیہ کا یہ واقعہ شیئر کیا ہے۔ مزید لکھتے ہیں۔۔۔۔۔
ایک دوست کے پوسٹ کو شئیر کر رہا ہوں، یہ بات کہیں اور بھی پڑھی تھی، ویسے مجھے لگتا ہے کہ حضرت کاشمیری نے یہ بات بطور انکسار کہی، ان کا کام بہت بڑا ہے اور میرا نہیں خیال کہ وہ صرف فقہ حنفی کے چکر میں پڑے رہے، ہاں اس سے یہ سیکھا جا سکتا ہے کہ اصل توجہ اور فوکس کہاں رکھنا چاہیے اور اپنا مقصد بڑا رکھنا چاہیے۔



<<< پچھلا صفحہ اگلا صفحہ >>>

Shoaib Saeed Shobi. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.