جنرل راحیل شریف اور ہماری شخصیت پرستی

ہماری قوم شخصیت پرستی کی بیماری میں بری طرح گھری ہوئی ہے۔ جنرل راحیل شریف کی مدتِ ملازمت میں توسیع کی باتیں ہو رہی ہیں گویا اگر انھیں توسیع نہ دی گئی تو پاکستان پتھروں کے زمانے میں چلا جائے گا اور آنے والا سپہ سالار ان کے تمام اقدامات کو رول بیک کر دے گا۔

خلیفہ ثانی حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ کے دور حکومت میں مسلمانوں میں یہ تاثر عام پیدا ہو گیا تھا کہ حضرت خالد بن ولید ؓ ہر جنگ کی کامیابی کی ضمانت ہیں۔ اس پر حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ نے انھیں سپہ سالاری کے درجے سے ہٹادیا کہ فتح اللہ تعالٰیٰ کی مدد سے ہوتی ہے نہ کہ کسی خاص شخصیت کی وجہ سے۔ دوسری طرف امیر کی اطاعت حضرت خالد بن ولید ؓ کے کردار کا اہم حصہ تھا اور انھوں نے اس فیصلے کو بخوشی قبول کیا تھا۔

ہم ویسے تو بڑی اسلام کی باتیں کرتے ہیں مگر کبھی اسلام کے سنہرے دور سے سبق سیکھنے کی بھی کوشش کر لیا کریں تو کیا ہی بات ہو!

<<< پچھلا صفحہ اگلا صفحہ >>>

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔


اپنی قیمتی رائے سے آگاہ کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

Shoaib Saeed Shobi. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.