مجھے سونے دو!


میں: مجھے سونے دو!۔۔۔۔۔

دماغ: نہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔جاگتا رہ! ۔۔۔۔۔۔ یاد کر اگر تو ماضی میں فلاں قدم نہیں اٹھاتا تو آج کہاں سے کہاں ہوتا۔ اب ذرا سوچ تیرا مستقبل میں کیا بنے گا؟

میں: اچھا ٹھیک ہے۔ جیسی تمھاری مرضی!۔۔۔

<<< پچھلا صفحہ اگلا صفحہ >>>

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔


اپنی قیمتی رائے سے آگاہ کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

Shoaib Saeed Shobi. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.