تم ایسا کرنا

تم ایسا کرنا

کوئی جگنو،کوئی ستارہ

سنبھال رکھنا

میرے اندھیروں کی فکر چھوڑو

بس اپنے گھر کا خیال رکھنا

ہماری آنکھوں نے جو مِل کے دیکھے

وہ سارے سپنے سنبھال رکھنا

یہ دُوری اپنی تو عارضی ہے

نہ دل میں اس کا ملال رکھنا

تمھاری سانسیں، تمھاری دھڑکن

سنو ہماری امانتیں ہیں

ہماری خاطر ہی تم

ہمیشہ اپنا خیال رکھنا




<<< پچھلا صفحہ اگلا صفحہ >>>

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔


اپنی قیمتی رائے سے آگاہ کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

Shoaib Saeed Shobi. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.